Skip to main content

ای سی پی کا ’اکتوبر انتخابات‘ کے لیے ای وی ایمز کی تعیناتی کا امکان نہیں

 ای سی پی کا ’اکتوبر انتخابات‘ کے لیے ای وی ایمز کی تعیناتی کا امکان نہیں

ای وی ایم اور آئی ووٹنگ کے لیے بار بار پائلٹ پراجیکٹس، ٹرائلز اور ٹیسٹ کی ضرورت ہوتی ہے جو تیز ہونے کے باوجود کم از کم چار سے پانچ ماہ تک جاری رہ سکتے ہیں۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان (ECP) الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں (EVMs) اور I-Voting ٹیکنالوجی کے استعمال کی راہ پر گامزن ہے لیکن اس سال اکتوبر میں ہونے والے عام انتخابات میں ان کے شامل کیے جانے کا کوئی امکان نہیں ہے۔
الیکشنز ایکٹ 2017 میں ترامیم کے باوجود، جسے گزشتہ سال نومبر میں پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں منظور کیا گیا تھا، جس میں الیکٹرانک ووٹنگ مشینوں کے استعمال کی اجازت دی گئی تھی اور سمندر پار پاکستانیوں کو بھی ووٹ کا حق دیا گیا تھا، ایسے سنگین مسائل ہیں جن پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ ٹیکنالوجی کی تعیناتی سے پہلے.

 ای سی پی کے حکام اور متعلقہ ماہرین کے ساتھ متعدد پس منظر کی بات چیت میں یہ ثابت ہوا کہ انتخابی ادارہ انتخابی عمل سے دستی عنصر کو ختم کرنے کے لیے تیار ہے لیکن فیصلہ لینے سے پہلے کئی چیلنجز درپیش ہیں۔ ان میں سے ایک ٹیکنالوجی کا وسیع اور وقت طلب انتخاب کا عمل ہے۔

 ای وی ایم اور آئی ووٹنگ کے لیے بار بار پائلٹ پراجیکٹس، ٹرائلز اور ٹیسٹ کی ضرورت ہوتی ہے جو کہ اگر تیز ہو جائیں تو کم از کم چار سے پانچ ماہ تک جاری رہ سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ اندرونی/بین الاقوامی ٹینڈرنگ کے ذریعے مشینوں کے حصول کے طویل اور پیچیدہ عمل میں کم از کم مزید پانچ سے چھ ماہ درکار ہیں۔ لیکن یہ تکنیکی آلات نہ تو بڑی تعداد میں دستیاب ہیں یعنی 700,000-800,000 (صرف EVMs) اور نہ ہی انہیں عالمی منڈیوں سے فوری طور پر خریدا جا سکتا ہے، چاہے مل بھی جائیں۔

طریقہ کار کے مسائل کے علاوہ، ایک اہم امتحان تکنیکی تبدیلی کو قبول کرنے میں بڑے عوام، سیاسی جماعتوں اور دیگر اسٹیک ہولڈرز کا اعتماد حاصل کرنا ہے۔ دیہی علاقوں میں زیادہ ووٹروں کے گرنے کے تناظر میں یہ مسئلہ چیلنج بن جاتا ہے۔

 اس کے لیے خاص طور پر ووٹرز کو بہتر سمجھ اور آگاہی اور پولنگ عملے کی بڑی تعداد کو تربیت دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا اور خبردار کیا کہ پاکستان کی 220 ملین سے زیادہ آبادی میں سے نصف سے زیادہ ووٹ ڈالنے کے اہل ہیں اور انہیں نئی ​​ٹیکنالوجی میں تبدیل کرنا کیک کا ٹکڑا نہیں ہو گا، انہوں نے خبردار کیا کہ پاکستان انتخابات میں تنازعات کا متحمل نہیں ہو سکتا۔ مزید برآں، ٹیکنالوجی/مشینوں کو شہری اور دیہی تقسیم کے زمینی حقائق کے مطابق ڈیزائن اور تیار کرنے کی ضرورت ہوگی۔ جہاں ایک طرف کراچی، لاہور اور اسلام آباد جیسے شہر ترقی یافتہ ہیں، وہیں دوسری طرف وزیرستان، بلوچستان کے دور افتادہ اضلاع اور سندھ اور پنجاب کے دور دراز علاقے بھی ہیں
معلوم ہوا کہ 13 اپریل کو ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ نے ماضی کی طرح متعلقہ اقدامات کو جاری رکھنے کی ہدایت کی اور اس بات پر زور دیا کہ ٹیکنالوجی کے اہم استعمال کو بڑھانے کا ’مشن‘ ان کی اولین ترجیح رہے گا۔ الیکشن کمیشن کے ایک اور سینئر عہدیدار کا کہنا تھا کہ ’’اگر موجودہ حکومت نے متعلقہ قوانین کو کالعدم کرنے کا انتخاب کیا تو بھی ہم سمندر پار پاکستانیوں کے لیے ای وی ایم اور آئی ووٹنگ پر کام جاری رکھنے کے اپنے عزم سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔‘‘ ای سی پی کے ذرائع نے بتایا کہ الیکشن کمیشن نے اس سال کے اوائل میں پراجیکٹ مینجمنٹ یونٹ قائم کیا ہے اور پیشہ ور افراد کو شامل کیا ہے، جو ای وی ایم اور آئی ووٹنگ کے عمل کو ہموار کرنے میں مصروف ہیں۔

 آرٹیکل 218 کے تحت، آزادانہ، منصفانہ اور شفاف انتخابات کا انعقاد الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے جس کے لیے ای وی ایم کو شامل کرنے کی راہ ہموار کرنے کے لیے محتاط انتظام کی ضرورت ہے۔ لیکن آئندہ الیکشن اگلے سال کے اوائل میں ہونے کی صورت میں بھی ایسا ممکن نظر نہیں آتا۔ یہ کہے بغیر کہ انتخابی ادارہ کو بھی مطمئن ہونا چاہیے کہ وہ ای وی ایم میں پائی جانے والی کسی بھی کوتاہیوں اور خامیوں سے نمٹنے کے قابل ہو، جیسے رازداری اور شفافیت کی کمی اور ووٹروں کے حقوق کا تحفظ۔

 اس پس منظر میں، بلوچستان، سندھ اور پنجاب میں بلدیاتی انتخابات میں مشینوں کا استعمال انتہائی ناممکن نظر آتا ہے، ان متعدد چیلنجوں کو مدنظر رکھتے ہوئے جن کا انتخاب کرنے سے پہلے ان کا مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے۔

Comments

Popular posts from this blog

پیٹرول پر 9.32 روپے فی لیٹر سبسڈی، ڈیزل پر 23.05 روپے کی سبسڈی ابھی باقی ہے

 پیٹرول پر 9.32 روپے فی لیٹر سبسڈی، ڈیزل پر 23.05 روپے کی سبسڈی ابھی باقی ہے پیٹرولیم ڈویژن کے ایک اعلیٰ عہدیدار کے مطابق، پیٹرول پر 9.32 روپے فی لیٹر اور ڈیزل پر 23.05 روپے فی لیٹر کی سبسڈی اب بھی موجود ہے۔ اسلام آباد: پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں 60 روپے فی لیٹر، 27 مئی کو 30 روپے اور پھر 3 جون 2022 کو 30 روپے فی لیٹر اضافے کے بعد پیٹرول کی قیمت 209 روپے 86 پیسے فی لیٹر اور ڈیزل کی قیمت میں اضافہ ہوا۔ 204.15 روپے فی لیٹر تاہم، گزشتہ سات دنوں میں موجودہ حکومت کی طرف سے 60 روپے فی لیٹر اضافے کے بعد، پیٹرول پر 9.32 روپے فی لیٹر اور ڈیزل پر 23.05 روپے فی لیٹر کی سبسڈی اب بھی موجود ہے، پیٹرولیم ڈویژن کے ایک اعلیٰ اہلکار کے مطابق۔ POL مصنوعات کی نئی قیمتوں کا حوالہ دیتے ہوئے  "اس کا مطلب ہے کہ سبسڈی ختم کرنے کے لیے حکومت کو پیٹرول کی قیمت میں 9.32 روپے فی لیٹر اور ڈیزل کی قیمت میں 23.05 لیٹر کے اضافے کے لیے تیسری بار جانا پڑے گا۔"  آئی ایم ایف نے پی او ایل مصنوعات پر 100 فیصد سبسڈی واپس لینے کو کہا ہے۔ سبسڈی ختم ہونے کے بعد حکومت کو ٹیکس اور پیٹرولیم لیوی لگانا پڑے گی۔ بین ا

Audio, Imran's lie exposed, American conspiracy fake, NRO seeks to save himself, people decide who is saboteur, who builder, PM

Audio, Imran's lie exposed, American conspiracy fake, NRO seeks to save himself, people decide who is saboteur, who builder, PM Mansehra (Tuesday, TV reports) Minister Shahbaz Sharif has said that he himself and ask NRO to save his government, his lies were exposed to audio.  The saboteur who decide who is going to build, Khan attempts of cheap flour in the fake story of the plot, Chief KP 24 /ghnty fail, bnayyngy Punjab province.  Niazi give young people a free laptop in abuses, I am announcing the Medical College in Quetta, also says that the package of one billion rupees He said that Punjab is the opportunity to work will leave sent to the Punjab, but I support you, you have a person who is to decide which egoistic and false, the inflation heaven in this era that is, he takes u to u, to one million unemployed people instead of millions of jobs, which has displaced thousands of families rather than 50 million homes.  The people have to decide the issue, and I have to choose to d

What exactly is polio

polio Virus What exactly is polio? Poliomyelitis, sometimes known as polio, is a debilitating and potentially fatal disease caused by the polio virus. The virus transmits from person to person and can infect a person's spinal cord, resulting in paralysis (inability to move bodily parts). Symptoms  The majority of people infected with polio virus (about 72 out of 100) exhibit no visible symptoms. Approximately one in every four people (or one in every 100) infected with the polio virus will experience flu-like symptoms, which may include: Throat irritation Fever Tiredness Nausea Headache stomach ache Symptoms normally persist 2 to 5 days before disappearing on their own. Read What exactly is polio? The tetanus shot a live vaccine Varicella Vaccine: Is Your Child the Right Age for the Chickenpox Vaccine? The Moderna Booster: Your Best Defense Against Shingles Tetanus vaccination with CVC and mRNA vaccines Polio Vaccine Finder – How to Find the Right Polio Vaccine for You Why You Shou